Saturday, November 18, 2017

مرد کا پردہ

بھائی!! وہ لڑکی تو دیکھ... کیا لگ رہی ہے... کیا غضب ڈھا رہی ہے... دیکھ یار... دیکھ تو سہی...
کیوں بھائی میں کیوں دیکھوں؟ کیا وہ دیکھنے کی چیز ہے جسے دیکھا جائے؟؟
یار دیکھ تو سہی بڑی بن ٹھن کے تیاری کے ساتھ نکلی ہے نمائش کرنے کا ہی انداز ہے، دیکھ تو سہی یار...

سوری بھائی میں پردہ کرتا ہوں...
ہیں...!!
کیا کہا تو نے پردہ؟ دماغ تو ٹھیک ہے تیرا، پردہ تو لڑکیاں کرتی ہیں...
میرے بھائی مجھے پتہ ہے کہ لڑکیوں کے لیے پردے کا حکم ہے پر بھائی لڑکوں کے لئے بھی پردے کا حکم ہے.
جہاں عورت کے لئے پردے کا حکم ہے وہاں مرد کے لئے بھی نگاہیں نیچی رکھنے کا حکم ہے اور یہ پردے کا حکم لڑکوں کو پہلے اور لڑکیوں کو بعد میں دیا گیا ہے۔ مگر افسوس کا مقام ہے کہ ہمیں لڑکیوں کے پردے کا پتہ ہے پر اپنے پردے کا پتا ہی نہیں...

مرد کا پردہ کیا ہوتا ہے
اللہ تعالیٰ نے سورۃ النور آیت 30 میں کہا ہے:
"مسلمان مردوں سے کہو کہ اپنی نگاہیں نیچی رکھیں."
پھر آیت 31 میں عورت کو پردے کا حکم ہے.
ہمیں 31 نمبر آیت کا تو پتہ ہوتا ہے لیکن ہمیں 30 آیت کا سرے سے پتہ ہی نہیں ہوتا..

عورت اگر پردہ نہیں کر رہی تو وہ اپنے اوپر سراسر ظلم کر رہی ہے، نامہ اعمال تو سیاہ ہو رہا ہے پر کوئی اوباش اس کی عزت پر ہاتھ بھی اٹھا سکتا ہے، اس کی بے پردگی آخرت میں رسوائی کا سامان تو ہے، دنیا میں بھی رسوا ہو سکتی ہے.
لہذاٰ... اس کا عمل اس کے ساتھ ہے.
تم سے یہ سوال نہیں ہوگا کہ فلاں پردہ کرتی تھی یا نہیں بلکہ سوال یہ ہو گا کہ کیا تم نے اپنی نظریں جھکائی تھیں؟ کیا تم نے اپنا پردہ کیا تھا...؟

عورتوں کی بے پردگی پر اپنی جگہ غلط ہے مگرہم یہ نہیں سوچتے کہ حکم تو ہمارے لئے بھی ہے کہ نامحرم عورت کو دیکھ کر نگاہیں جھکا لیا کرو..اگر عورت نے بے پردہ ہوکر اللہ کا حکم توڑا ہے تو آپ نے بھی اس عورت کو دیکھ کر اللہ کا حکم توڑا ہے.
افسوس کہ ہماری ساری نصیحتیں صرف دوسروں کے لیے ہی ہوتی ہیں.

No comments: